facbook fack news


PUBLISHED : January 22, 2015

facebook





sochnewspak
اگر فیس بک کی متعارف کردہ ایک نئی ٹیکنالوجی موثر ثابت ہوئی تو جلد ہی آپ کی وال پر جعلی خبریں اور جھوٹی کہانیاں ماضی کا حصہ بن جائیں گی۔
فیس بک نے ایک نئی آپشن پیش کی ہے جس کے تحت آپ دھوکہ دینے کی نیت سے پوسٹ کیےگئے مواد کو نشان دہی کر سکیں گے۔
اگرچہ وہ پوسٹ فیس بک سے مکمل طور پر ختم نہیں ہو گی، البتہ اس الگوردم (خصوصی سافٹ ویئر) کی مدد خبر کی ترسیل متاثر ہو گی، اور اس کے آپ کی وال پر نظر آنے کی امکانات بہت کم ہو جائیں گے۔
جعلی خبروں نے فیس بک کے ایک ارب 35 کروڑ صارفین میں سے بہت سوں کو کئی بار بےوقوف بنایا ہے۔
فیس بک نے اس کی وضاحت کرتے ہوئے کہا: ’اگر کسی خبر یا مضمون کو بہت سے لوگ جعلی قرار دیں، یا اسے اپنی وال سے ڈیلیٹ کر دیں، تو اس کے دوسروں کی نیوز فیڈ میں ظاہر ہونے کے امکانات کم ہو جائیں گے۔‘
حال ہی میں سامنے آنے والی جعلی خبروں میں آج کے دور میں ڈائنوساروں کے پائے جانے کی خبریں اور سانتا کلاز کا وجود ثابت کرنے والی خبریں شامل ہیں۔
اس سے قبل فیس بک پر اعتراض کیا جاتا رہا ہے کہ وہ جعلی اکاؤنٹوں کے مسئلے سے نمٹنے کے لیے کچھ نہیں کر رہی۔ 2012 میں کمپنی نے اعتراف کیا تھا کہ اس کے آٹھ کروڑ سے زائد اکاؤنٹ جعلی ہیں۔
اس وقت فیس بک نے کہا تھا کہ ان ’ناپسندیدہ‘ اکاؤنٹوں میں وہ بھی شامل ہیں جو فرضی ناموں سے بنائے گئے ہیں اور جو ’ہماری ٹرمز آف سروس کی خلاف ورزی کرتے ہوئے سپیمنگ اور اس جیسے دوسرے مقاصد کے لیے استعمال ہو رہے ہیں۔‘
2013 میں کی جانے والی ایک تحقیق کے مطابق ایک تہائی امریکی فیس بک کو تازہ ترین خبروں کے حصول کے لیے استعمال کرتے ہیں۔
تاہم ’دی انیئن‘ جیسی مزاحیہ ویب سائٹوں کے مداحوں کو تسلی ہونی چاہیے کہ فیس بک کے مطابق ’طنزیہ اور مزاحیہ‘ مواد اس پالیسی سے متاثر نہیں ہو گا جس پر واضح انداز میں لکھا ہو کہ یہ ’طنزیہ‘ ہے








Share:


Latest News