مسجد اقصیٰ میرے خواب میں آئی اور روتے ہوئے کیاکہا؟ – طیب اردوان نے کیا خواب دیکھا جو سچ ثابت ہوگی – ایمان افروز دینے والا واقعہ


مسجد اقصیٰ میرے خواب میں آئی اور روتے ہوئے کیاکہا؟ - طیب اردوان نے کیا خواب دیکھا جو سچ ثابت ہوگی - ایمان افروز  دینے والا واقعہمسجد اقصیٰ ایک ایسی مسجد ہے جہاں کل روئے زمین پر انسانوں میں بھیجے گئے انبیا و رسل کی امامت نبی کریمؐ نے کروائی ہے۔17ماہ تک رسول کریمؐ نے بطور قبلہ مسجد اقصیٰ کی جانب منہ کر کے نمازیں ادا کی ہیں۔ پوری دنیا کے مسلمانوں کو چاہئے کہ وہ شرم سے گڑھ جائیں۔ ایک امریکہ کا صدر بول کر کہتا ہے کہ اسرائیل کواجازت ہے وہ بیت المقدس کو دارالحکومت بنائے اور مسلمان حکمران بیان دے رہے ہیں۔ مسلمان حکمران اپنی اپنی سیاست چمکانے کیلئے پہلے ایک دوسرے کو گالیاں دیتے ہیں پھر نمبرنگ کیلئے اکٹھے بیٹھ جاتےہیں۔دین کے اس مسئلے میں اکٹھے کیوں نہیں بیٹھتے۔ سارے پاکستان کے سیاستدانوں ، علما و مشائخ کو چاہئے تھا کہ ایک صفحے پر اکٹھے ہوتے اور ایک بیان ہی دے دیتے۔ میں سلیوٹ پیش کرتاہوں ترک صدر طیب اردوان کو جن کے پاس ایٹمی طاقت نہیں وہ دفاعی اعتبار سے آپ سے کمزور ہیں آپ کی تو دفاعی قوت کا لوہا دنیا مانتی ہے مگر مجھے پھر کہہ دینے دو کہ میدان میں بندہ ایٹمی طاقت سے نہیں بلکہ ایمان کی قوت سے لڑتا ہے۔ اس موقع پر ترک صدر طیب اردوان کے جرأت مند بیان قابل ستائش ہیں۔ انہوں نے اپنی پارلیمنٹ سے خطاب میں بیت المقدس کے مسئلہ پر جرأت مندانہ تقریر کی ہے۔انہوں نے بہت عرصہ پہلے کہا تھا کہ مسجد اقصیٰ میرے خواب میں آئی تھی، اور روکہ کہتی تھی کہ آئے کوئی صلاح الدین ایوبی ؒ کا ماننے والا، کوئی آئے مجھے بچائے، طیب اردوان کا کہنا تھا کہ مسجد اقصیٰ میرے خواب میں آئی تھی اور روتی تھی