او آئی سی اجلاس – پاکستان نے امت مسلمہ کو جھنجوڑ کر رکھ دیا – ایسا کیا ہوا آج کے اجلاس میں؟ جانئے


او آئی سی اجلاس  - پاکستان نے امت مسلمہ کو جھنجوڑ کر رکھ دیا  - ایسا کیا ہوا آج کے اجلاس میں؟ جانئےاستنبول (ویب ڈیسک) وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ ٹرمپ کے فیصلے کے بعد امت مسلمہ اپنے حکمرانوں سے سوال پوچھتی ہے کہ ہم نے نہتے فلسطینی مسلمانوں کے لئے کیا کیا؟ کیا ہم اپنے سیاسی اختلافات سے بالاتر ہوکر امت کے لئے نہیں سوچیں گے؟ہمیں فوری طور پر اپنے سیاسی اختلافات بھلانا ہوں گے ، اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل اگر امریکی صدر کے اعلان پر کوئی اقدامات نہیں اٹھاتی تو مسلم ممالک کو یہ معاملہ جنرل اسمبلی کے سامنے پیش کرنا چاہیے ، مسئلہ فلسطین کے حل کے لئے مسلم ممالک کواقتصادی دباﺅ بڑھانا ہوگا ۔ استنبول میں اسلامی تعاون تنظیم کے ہنگامی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ پاکستانی عوام کی جانب سے امریکی اقدام کی بھرپورمذمت کرتاہوں اورپاکستان اس موقع پر فلسطین اور فلسطینی عوام کے پیچھے کھڑا ہے۔ مقبوضہ بیت المقدس سے متعلق امریکی اقدام انتہاپسندی،دہشتگردی بڑھائے گا۔ پاکستان کی قومی اسمبلی اور سینٹ نے امریکی اقدام کے خلاف مذمتی قرارداد منظور کی ہے اور ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ امریکہ اپنا فیصلہ فی الفور واپس لے ۔ہم فلسطینیوں کی منصفانہ جدوجہد کےساتھ کھڑے ہیں – پاکستان آزادفلسطینی ریاست کاقیام چاہتا ہے ۔ وزیر اعظم کا مزید کہنا تھا کہ اس وقت ہم تاریخ کے ایک نازک موڑ پر کھڑے ہیں – فلسطینیوں پر مظالم ڈھانا اسرائیل کی نئی حرکت نہیں ہے بلکہ 70سالوں سے ایسا ہی ہو رہا ہے ۔ ہمارے ذاتی اختلافات اور کمزوریوں سے فائدہ اٹھا کر عالمی طاقتوں نے یہ فیصلہ کیا ہے ۔ معاملہ صرف فلسطین کی حد تک محدود نہیں ہے بلکہ 70سال سے بھارت بھی مقبوضہ کشمیر پرغیر قانونی قبضہ کیے ہوئے ہے اور وہاں نہتے مسلمانوں پر ظلم و ستم کے پہاڑ توڑے جا رہے ہیں